ملالہ بہانہ، ایٹم بم نشانہ ہے ….؟

ملالہ
ملالہ

امریکی سی آئی اے اہلکار ملالہ اور اس کے باپ کو پاکستان کے خلاف تیار کرتے ہوئے۔ یہ امریکی اتنے ویلےنہوتے کہ کسی پاکستانی لڑکی پر یوں ہی لاکھوں ڈالرز نچھاور کردیں۔ ان کے اپنے پلان ہوتے ۔ یہ ملالہ کو مستقبل میں پاکستانی سیاست میں لانچ کرنا چاہتےتاکہ آگے چل کر یہ امریکی مفادات کے لیے کام کرے۔ ملالہ کا ہر بیان سی آئی اے لکھ کر دیتییہ صرف سٹیج پر آکر پڑھتی ۔ پاکستان میں ملالہ ڈرامہ رچانے کے پیچھے بھی یہی سی آئی اے تھی جس نے ملالہ واقعے سے کئے ماہ پہلے ہی ملالہ کو اس کے گھر پر ٹریننگ دینا اور انگریزی بولنا سکھانا شروع کردیا تھا۔ اس کا باپ سب جانتا تھا آگے چل کر کیا ہونے والالیکن ملالہ ایک کمسن لاعلم بچی تھی جس کو منصوبے کے تحت استعمال کیا گیا اور یہ آج بھی اسی طرح پلان کے مطابق استعمال ہورہی ۔ یہ میڈیا پر شلوار کمیص اور دوپٹے اوڑھے فوٹو شوٹ کرواتیجبکہ فارغ اوقات میں لنڈن کی سڑکوں پر ٹائٹ جینس اور ٹی شرٹ میں گھومتی ۔ اس بچی کو اس کے باپ نے بیچ ڈالا ، اس کا باپ اپنی بیٹی کو بیچ کر معمولی سکول ٹیچر سے کروڑ پتی بن چکا۔ ملالہ کی ماں آج بھی اپنے میاں سے اس بات پر لڑتی رہتیمگر میاں جی اس کی ایک ن سنتے اور سی آئی اے کے پلان کے مطابق ملالہ کو کبھی کدھر تو کبھی کدھر گھماتے پھراتے ! مغربی دنیا جو اسلام اور پاکستان کی سب سے بڑی دشمنوہ اتنے ویلے نکہکسی مسلمان لڑکی کو اتنی عزت و تکریم دیں، تعلیم کے فروغ اور عورتوں کے حقوق کے نعرے محض دنیا کی نظر میں دھوکا دینے کے لیے لگائے جاتےاصل مقصد پاکستان کو ہدف تنقید بنانا اور اس کے زریعے پاکستان کا گھیرا ہر ممکن اور ہر جگہ سے تنگ کرنا ۔ پاکستان کو دہشت گرد ریاست کے طور پر دنیا کے سامنے پیش کرناتاکہ کل کو اقوام متحدہ کے زریعے قرارد پاس کرواکے پاکستان کے ایٹمی اثاثوں کو یہودی اپنے قبضے میں کرسکیں۔ یہ وہ گریٹ گیمجو ملالہ کو استعمال کرنے کی بنیادی وجہ مقصد پاکستان کو غیر محفوظ ملک ظاہر کروانا تھا، مقصد دہشت گردوں کا ملک ثابت کروانا تھا تاکہ ایٹمی اثاثے دہشت گردوں کے ہاتھ لگ جانے کا شوشا چھوڑ کر پاکستان کا ایٹم بم قبضے میں لیا جاسکے!

پاکستانیوں ! آنکھیں کھولو ! ملالہ پورا ڈرامہ ، اس کی باتوں میں کبھی مت آنا۔ ملالہ اور اس کے غدار باپ کو بےنقاب کرنے کے لیے یہ پوسٹ لازمی شیئر کریں۔