کیا بیٹی پیدا ہونا جرم ہے

gumnam
gumnam
اس سے پہلے چار دفعہ مختلف گھروں کے لڑکے اس رشتے سے رد کر چکےیہ پانچویں بار تھی وہ اپنی دوست کو میسج پر بتا رہی تھی کے آج پھر لڑکے والے دیکھنے آ ردعا کرنا ان میں پسند آ جاؤں مجھ سے اب بابا کے چہرے پر جھریاں ن دیکھی جاتینہ جانے انہوں نے ایسا کیا گناہ کیا تھا کے میں ان پر بوجھ بنی ہوئی ہوں. اب تو ماں کے ہاتھ بھی کانپتےاس مشین کو چلا چلا کر انہوں نے آج تک میرے لیے بہت کچھ بنایا لیکن قسمت پتہ ن کیا امتحان لے رہی . شام کے وقت وہ اپنے کمرے میں بیٹھی یہی دعا مانگ رہی تھی کے میرے بابا کی عزت بچ جائے ک وہ پھر سے یہی نہ سوچیں کے بیٹی کیا پیدا کر لی عذاب میں پڑہم تو. اور وہی ہوا آنے والوں نے ن پوچھا کے: آپ کی بیٹی نماز پڑھتییا ن..! انہوں نے ن پوچھا کے کیا دین کے لیے کبھی کسی مدرسے میں گئی یا ن…! یا کتنا پڑھا دین کا…! انہوں نے ن پوچھا دنیا کا کتنا پڑھا سکول کتنا پڑھا…! . انہوں نے ن پوچھا کے بیٹی کیا دو وقت کا کھانا بنا کر اپنے شوہر کو اور ہمیں دے سکتییا ن…! بلکہ صاحبزادے جو کے ایک طرف کرسی پر ٹانگ رکھے بیٹھےانہوں نے ماں کو اشارہ کیا ماں نے بھی کہہ دیا بیٹی کو بلایے… اندر سے لڑکی کو لے کر اُس کی ماں باہر آئی یہاں شہزادہ چارلس صاحب منہ اٹھایا اور باہر چلے … لڑکے کی ماں پیچھے گئی بیٹا کیا باتیہاں اندر لڑکی اور اس کے ماں باپ سن ر ….. مجھے ن کرنی اس سے شادی شکل تو دیکھیں اس کی یہ بھی کوئی لڑکی . لڑکے کا والد معزرت کرتا ہوا وہاں سے اٹھا اور اِدھر لڑکی وہاں سے اٹھی اور بھاگتی ہوئی اپنے کمرے میں جا کر دروازہ بند کر دیا. تین دن کمرے کے ایک کونے میں وہ گھٹ گھٹ کر مرتی رہی اور آخر کار چو دن گولیوں کا ایک پیکٹ اپنے اندر ڈال کر وہ اس معاشرے سے خود کو الگ کرنے کے لیے سکون کی نیند تلاش کرنے چلی گئی. اب میرا سوالکے کیا اسے اُس کے حسن نے مارا ؟ یا اُس پانچویں شخص نے مارا .؟ یا اُن تمام لوگوں نے جو اس سے پہلے آ چکے .؟ میں بتاتا ہوں…..! لعنت بھیجتا ہوں میں اس گندے معاشرے پر جس نے اسے مارالوگوں کی بیٹیوں کو ایسے دیکھنے جاتے ہو جیسے کے کسی باغ کا بیوپاری جاتاباغ اچھا لگا تو ٹھیک ورنہ کوئی اور لے لوں گا. آپ میں ہم وہ تکلیف ن محسوس کر سکتےجو ایک باپ کے سینے میں لگی ہوتیایک ماں کا کلیجہ جب پھٹ رہا ہوتااور جب اُس کی آنکھیں خون بہا رہی ہوتی . جب کسی کی بہن بیٹی کو دیکھنے جاؤ تو اسے شکل سے نہ دیکھو… بلکہ والدین سے پوچھو کے کیا وہ دین جانتی … کیا وہ میری ماں کو ماں سمجھنے کے قابل … کیا وہ دو وقت کا کھانا مجھے اور میرے ماں باپ کو دے سکتی . اور اگر حسن چاہیےتو میں آپ کو ایک مشورہ دیتاجاؤ مغرب میں وہاں حسناور وہاں حسن ملے گا بھی باقی حیا شرم دین اُن کے قریب سے بھی ن گزرا ہو گا اور ویسے بھی تم کون سا حیا شرم یا دین چاہیے . زرا سوچو گھر میں جو بہناسے پانچ دفعہ کوئی دیکھنے آئے اور پانچویں دفعہ بھی ک ن مجھے ن یہ پسند تو تم پر قیامت گزرتیاور تم یاد بھیخود کتنی بیٹیوں پر قیامت گرا چکے ہو. یقین مانیے ہمیں پتہ بھی ن ہوتا کے ک ہماری وجہ سے کسی گھر میں کتنا بڑا فساد کتنا بڑا دُکھ جنم لے چُکا . حُسن نہ دیکھیے کسی کی عزت دیکھیے. کیا فائدہ اگر حُسن ملے اور عزت نہ ہو بے عزتے لوگ ہوں حیا نہ ہو دین نہ ہو.. لعنت نہ بھیجوں میں ایسے لوگوں پر. اور کیا ہی زندگی ہو کے سادہ چہرہ ہی کیوں نہ ہو دین ہو عزت دار لوگ ہوں حیا ہو اور دین ہو. یہ بیٹیاں اپنی خوشی سے زیادہ اپنے باپ کے دُکھ میں مر رہی ہوتیکے ک میرا والد یا میری والدہ مجھ سے مایوس تو ن لوگوں میں حیا شرم اور دین دیکھو…حسن ن..!! یہ سچائی اگر کسی کو بُری لگی ہو تو معزرت وسلام ۔۔۔

متعلقہ خبر یں

روزانہ خبریں اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔

Leave a Reply