اسمارٹ فون کی روشنی سے کینسر کا خطرہ دگنا

یہ شعاعیں گھر اور اسٹریٹ لائٹس میں استعمال ہونے والی ایل ای ڈی لائٹ سے بھی نکلتی بارسلونا: اسمارٹ فونز، ٹیبلٹ اور ایل ای ڈی اسٹریٹ لائٹس سے نکلنے والی نیلی روشنی (بلیو لائٹ) سے کینسر کا خطرہ دگنا ہوجاتا ۔ یہ بھی پڑھیں: سام سنگ نے 34 فٹ چوڑا ایل ای ڈی ٹی وی بنالیا عالمی سطح پر ہونے والی تحقیق میں ماہرین نے اسمارٹ فونز اور ایل ای ڈیز سے نکلنے والی نیلی روشنی کو انسانی صحت کے لیے انتہائی نقصان دہ قرار دیتے ہوئے دعویٰ کیاکہ یہ بلیو لائٹس نہ صرف بریسٹ کینسر کا سبب بنتیبلکہ اس سے مثانے (پروسٹیٹ) کے کینسر کا خطرہ دُگنا ہوجاتا ۔ یہ بھی پڑھیں: کوریا میں ناخنوں پر روشن ایل ای ڈی کا رحجان بارسلونا انسٹی ٹیوٹ فار گلوبل ہیلتھ کے محققین نے 11 خطوں کے 4 ہزار افراد پر تحقیق کے بعد یہ نتیجہ اخذ کیا کہ گھروں کے اندر اور باہر ایل ای ڈی سے نکلنے والی نیلی روشنی کینسر جیسے جان لیوا مرض کو بڑھانے کا بڑا ذریعہ ۔ تحقیق کے مطابق الیکٹرانکس ڈیوائسز سے نکلنے والی شعاعیں انسانی جسم میں موجود گھڑی پر اثر انداز ہوتیبالخصوص ایسے افراد جو لمبی نیند کے لیے اسے استعمال کرتے ۔ یہ اُن ہارمونز کو نشانہ بناتیجو کینسر کا سبب بنتے ۔ یہ شعاعیں گھر اور اسٹریٹ لائٹس میں استعمال ہونے والی ایل ای ڈی لائٹ سے بھی نکلتی ۔

متعلقہ خبر یں

روزانہ خبریں اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔

Leave a Reply