بروس لی بننے کیلئے روزانہ 4 گھنٹے ورزش کرنے والا 8 سالہ بچہ

8 سالہ شہری رائیوسی امائی
8 سالہ شہری رائیوسی امائی

جاپان کے اس ننھے بچے کو بروس لی کا خطاب دیا جارہا ۔

ٹوکیو: جاپان کے 8 سالہ شہری رائیوسی امائی بروس لی کی فلمیں دیکھ دیکھ کر خود کو اس کردار میں ڈھالنے کی کوشش کرتااور اس کے لیے وہ ہر روز 4 گھنٹے سے زیادہ ورزش اور ٹریننگ کرتاجس سے اس نے اپنا بدن بروس لی جیسے کسرتی بدن میں ڈھال لیا ۔ اس خبر کو بھی پڑھیں : انسانی شکل والا کتا سوشل میڈیا پر مشہور ہوگیا

رائیوسی نے تین سال قبل بروس لی کی معرکتہ الآرا فلم ’دی گیم آف ڈٰیتھ ‘ دیکھی تھی جس کے بعد بچے نے خود کو سخت محنت کے بعد بروس لی جیسا بنایا اور اب سوشل میڈیا پر اس کے لاکھوں فالوورزجب کہ اسے کئی ٹی وی پروگراموں میں بھی مدعو کیا گیا ۔ ایک پروگرام ’سپرکِڈز‘ میں اس نے بروس لی کے تمام مشہور ایکشن سین دوبارہ کرکے لوگوں کو حیران کردیا۔

چھوٹا بروس لی روزانہ صبح 6 بجے بیدار ہوتااور اسکول جانے سے قبل ڈیڑھ گھنٹہ ورزش کرتا ۔ اسکول سے واپسی پر وہ کک لگاتا اور ننچکو چلاتاجس کے بعد وہ ایک گھنٹہ دوڑ لگاتا ۔ یوں مجموعی طور پر روزانہ وہ ساڑھے 4 گھنٹے ورزش کرتا ۔ اس خبر کو بھی پڑھیں : چینی والد نے 24 برس بعد بچھڑی ہوئی بیٹی کو ڈھونڈ نکالا

رائیوسی امائی کے فیس بک پر 2 لاکھ 90 ہزار فالوورزاور انسٹا گرام پر 33 ہزار افراد اس کے مداحجب کہ یوٹیوب چینل پر وہ آئے دن اپنی ویڈیوز پوسٹ کرتا ۔  8 سالہ بچہ مستقبل میں مارشل آرٹس کا ماہر بننا چاہتاتاہم سوشل میڈیا پر ناقدین نے اس کے والدین پر تنقید کرتے ہوئے کہاکہ اس بچے سے اپنے آئیڈیل کی تلاش میں برداشت سے باہر مشقت کرائی جارہی ۔ اس خبر کو بھی پڑھیں : چھوٹی کھلونا کشتی نے ہزاروں کلومیٹر کا سفر طے کرلیا