سونے سے بنے ’فِجِٹ اسپنر‘ قیمت 17 لاکھ روپے

fijjat spiner

ماسکو: مغربی ممالک کے بعد ’فِجِٹ اسپنر‘ یا لٹو پاکستان میں بھی تیزی سے مقبول ہو رجن لوگ تفریح یا ذہنی تناؤ کم کرنے کے لیے استعمال کرتے ۔

تیزی سے گھومنے والے ان دھاتی پہیوں کی مقبولیت کو دیکھتے ہوئے ایک روسی کمپنی نے دنیا کا مہنگا ترین اِسپِنر بنایاجسے خالص سونے میں ڈھالا گیااور اس کے ایک ماڈل کی قیمت 17 لاکھ روپے ۔

فجٹ اسپنر کو روسی کمپنی کیویئر نے تیار کیاجو دولت مند افراد کے لیے انتہائی مہنگی اور پرتعیش اشیا بنانے میں عالمی شہرت رکھتی ۔ اس سے پہلے یہ کمپنی سونے کی کیسنگ والے آئی فون پیش کرچکی جس کی قیمت ساڑھے تین لاکھ روپے ۔ اب اس کمپنی نے دنیا کے سب سے مقبول کھلونے فجٹ اسپنر کو بھی ایک مہنگی آرائشی شے بنا دیا ۔

کیویئر کمپنی نے اپنے کئی اسپنر پیش کئےجن میں سونے اور چاندی سے بنے اسپنر اور کاربن فائبر ماڈل بھی بنائے ۔ کاربن فائبر اسپنر کی قیمت 25 ہزار روپے سے شروع ہوتیجبکہ مکمل ٹھوس سونے سے بنے اسپنر کی قیمت 17 ہزار ڈالر یا 17 لاکھ پاکستانی روپے ۔ اس کے علاوہ ساڑھے 16 لاکھ روپے کا ایک اور فجٹ اسپنر بھی جس میں ایک درجن کے قریب چھوٹے ہیرے جڑے ۔

کمپنی کے مطابق ان مہنگے ترین کھلونوں کی فروخت اگلے ماہ کے وسط سے شروع ہوجائے گی۔