ویتنام کا ایسا شخص جس نے 35 سال سے ناخن نہیں کاٹے

ہنوئی: ویتنام سے تعلق رکھنے والے لیو کونگ ہیون نے گزشتہ 35 سالوں سے اپنے ناخن نہیں‘ کاٹے اور تمام تر مشکلات کے باوجود وہ اپنے ناخنوں کو مزید لمبا ہوتا دیکھنا چاہتے ہیں۔
ویتنام کے صوبہ نیم ڈن کے شہر ین گیو میں رہنے والے 58 سالہ لیو کا کہنا ہے‘ کہ کچھ لوگ پرندے پالنا، پودے لگانے یا گاڑیاں رکھنے کے شوقین ہوتے ہیں‘ لیکن بڑے ناخن رکھنا ان کا شوق ہے‘ اور لمبے ناخنوں کو محفوظ رکھنے کے لئے ان کی بہت دیکھ بھال بھی کی جاتی ہے۔
لیو کے ناخن 55 سینٹی میٹر لمبے ہیں‘ جو دکھنے میں درخت کی شاخوں کی طرح ہیں‘ تاہم لیو کا ماننا ہے‘ کہ لمبے ناخنوں کو پانی سے بچانا ضروری ہے‘ کیوں کہ ناخنوں کو پانی لگنے کی صورت میں ٹوٹنے کا خدشہ ہے‘ اور یہی وجہ ہے‘ کہ وہ پانی سے پرہیز کرتے ہیں‘ جس کی وجہ سے وہ نہانے سے بھی گریز کرتے ہیں۔
لیو کا کہنا ہے‘ کہ کھانے کے وقت انہیں‘ اہلیہ کی مدد درکار ہوتی ہے‘ اور یہی نہیں‘ جب انہیں‘ باتھ روم جانا ہوتا ہے‘ تو اس میں بھی ان کی اہلیہ مدد کرتی ہیں‘ جب کہ روزانہ کپڑے تبدیل کرتے ہوئے یا کورٹ پہنتے وقت انہیں‘ بہت احتیاط سے کام لینا پڑتا ہے۔
پیشے کے اعتبار سے لیو پینٹر ہیں‘ لیکن لمبوں ناخن ان کے کام میں کبھی رکاوٹ نہیں‘ بنیں، وہ اپنے ناخنوں میں سے برش کو گزار کر انگلیوں سے مضبوطی سے پکڑتے ہیں‘ اور بغیر کسی پریشانی سے کام سرانجام دیتے ہیں۔
ماضی کا ایک واقعہ سناتے ہوئے لیو کا کہنا تھا کہ ایک مرتبہ سڑک حادثے میں ان کا ایک ناخن ٹوٹ گیا تھا جس کے بعد انہوں نے کئی روز تک کھانا نہیں‘ کھایا لیکن اس کے بعد سے وہ ناخنوں کو محفوظ رکھنے کے لئے بہت زیادہ محتاط ہوگئے‘ ہیں۔
ان کا کہنا ہے‘ کہ بعض مرتبہ کام کے وقت بچے ان کے ناخن دیکھ کر خوفزدہ ہوجاتے ہیں‘ لیکن اس طرح کی چیزیں انہیں‘ ناخن بڑھانے کے شوق سے دور نہیں‘ کرسکتیں اور مرتبہ تو انہیں‘ ناخن کاٹنے کی صورت میں بھاری قیمت کی ادائیگی کی آفر بھی کی گئی لیکن انہوں نے آفر یہ کہہ کر ٹھکرا دی کہ وہ پیسوں کے لئے اپنے ناخنوں کو نہیں‘ کٹوائیں گے۔
روزانہ خبریں اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔