امریکا چین سے تجارتی جنگ برسوں پہلے ہار چکا، ڈونلڈ ٹرمپ

ڈونلڈ ٹرمپ
ڈونلڈ ٹرمپ

2 بڑی معیشتوں کے باہمی تجارتی روابط میں تنائو امریکا چین کے ساتھ تجارتی خسارہ جاری رکھنے کا متحمل ن ہو سکتا، ڈونلڈ ٹرمپ۔

واشنگٹن: امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہاکہ چین کے ساتھ کوئی تجارتی جنگ ن، یہ جنگ تو ہم برسوں پہلے امریکا کی نمائندگی کرنے والے احمق اور نااہل لوگوں کی وجہ سے ہار چکے ۔ اس خبر کو بھی پڑھیں : انڈیا،چین تنازع: کب کیا ہوا؟

امریکی صدر نے اپنے ٹویٹر پیغام میں لکھا کہ چین کے ساتھ ہماری کوئی تجارتی جنگ ن ، یہ جنگ تو ہم برسوں پہلے امریکا کی نمائندگی کرنے والے احمق اور نااہل لوگوں کی وجہ سے ہار چکے ، ٹرمپ نے مزید کہا کہ امریکا چین کے ساتھ تجارتی خسارہ جاری رکھنے کا متحمل ن ہو سکتا۔

صدرٹرمپ کا کہنا تھا کہ امریکا کو سالانہ 500 ارب ڈالر کے تجارتی خسارے کا سامنا ، املاک دانش چوری سے بھی مزید 300 ارب کا نقصان ہو رہا ، ہم یہ سب جاری ن رہنے دے سکتے۔

امریکی صدر کی ٹویٹ چین کی جانب سے امریکی مصنوعات کی درآمد پر ٹیکس کی شرح میں اضافے کا عندیہ دیے جانے اور ان مصنوعات کی فہرست جاری کرنے کے اگلے روز سامنے آئی ۔

واضح ر کہ حالیہ دنوں میں امریکا اور چین کی جانب سے ایسے اقدامات کیے جن سے 2 بڑی معیشتوں کے باہمی تجارتی روابط میں تنائو کی نشاندہی ہوتی ، پہلے امریکا نے چینی مصنوعات پر 25 فیصد تک ٹیکس عائد کرنے کا اعلان کیا تھا، اس کے جواب میں چین نے بھی امریکی مصنوعات پر اسی شرح سے ٹیکس بڑھانے کا اعلان کر دیا اورایک روز بعد 106 اشیا کی فہرست بھی جاری کر دی تھی جن پر اضافی ٹیکس عائد کیا جائے گا۔ اس خبر کو بھی پڑھیں : انڈیا اور چین کی سرحد پر کون کیا تعمیر کر رہا ؟