بھارتی جنگی جنون، 110 لڑاکا طیارے خریدنے اور سرحد پر جنگی مشقوں کا اعلان

 110 لڑاکا طیارے
 110 لڑاکا طیارے

بھارت کے جنگی عزائم سے خطے میں طاقت کے توازن اور قیام امن کو خطرہ لاحق ہو گیا

ممبئی: جنگی جنون میں مبتلا بھارت پندرہ ارب ڈالر کی مالیت کے 110 لڑاکا طیارے خریدنے کی تیاری کر رہاجس کے نتیجے میں خطے میں طاقت کا توازن بگڑنے اور امن کو خطرہ لاحق ہو گیا۔ اس خبر کو بھی پڑھیں : بھارت میں انتہاپسندوں کا سوئس جوڑے پر بدترین تشدد

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق بھارتی فضائیہ نے جاری کیے بیان میں کہاکہ 110 فائٹرز جیٹس کے اضافے سے جنگی بیڑے میں کمی پوری ہوجائے گی اور انڈین ایئرفورس کی استعداد میں اضافہ ہو گا۔ جنگی ہتھیار اور طیارے بنانے والے معروف بین الاقوامی اداروں جیسے بوئنگ، لوک ہیڈ مارٹن، ساب، اور ڈاسسالٹ ایوی ایشن اپنی بولیاں دیں گے۔ اس خبر کو بھی پڑھیں : ’’پاکستانی گرائونڈز میں بین الاقوامی مقابلوں کا انعقاد خواب ن رہا‘‘ کون کون سے بڑے انٹرنیشنل کھلاڑی پاکستان آنے پررضامند؟

انڈین ایئر فورس کے اہم افسر کا بین الاقوامی میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہنا تھا کہ طیاروں کی تیاری کا 85 فیصد کام بھارت میں ہی کیا جائے گا اس لیے طیاروں کی تیاری بھارت میں ہی کی جائے گی تاکہ مقامی صنعت کو فروغ مل سکے جس پر جنگی طیارے بنانے والی کمپنی لوک ہیڈ نے اپنا ’ ایف- 16 پروڈکشن لائن ‘ بھارت میں منتقل کرنے کی پیشکش کردی ۔ اس خبر کو بھی پڑھیں : کمزور مصافحہ کرنے والوں کو دل کے امراض لاحق ہوسکتے ، تحقیق

واضح ر بھارتی وزارت دفاع نے اس سے قبل سنگل انجن طیاروں کی خریداری کی خواہش کا اظہار بھی کیا تھا تاہم رواں سال فروری میں مودی حکومت نے دو انجن والے ایئر کرافٹ کی تیاری پر زور دیا تھا جس کے بعد بھارتی فضائیہ نے 110 فائٹرز جیٹس کی تیاری کے لیے ٹینڈرز طلب کر لیے ۔

دوسری جانب انڈین ایئر فورس نے 11 اپریل سے 21 تک جنگی مشقوں کا اعلان کردیا ۔ یہ جنگی مشقیں دو عیلحدہ مرحلوں میں شمالی اور مغربی سرحدوں پر کی جائیں گی جس میں 15 ہزار اہلکار اور 3 سو افسران حصہ لیں گے جب کہ ان مشقوں میں 11 سو ایئر کرافٹس بھی مشق کا حصہ ہوں گے۔ انڈین ایئر فورس کے کمانڈر کا کہناکہ بھارت کو دو جانب سے خطرات کا سامنااس لیے جنگی مشقیں ناگزیر ہو چکی ۔ جنگی مشقیں چین اور پاکستان کی سرحدوں کے نزدیک کی جائیں گی۔