جھل مگسی میں درگاہ پر خودکش دھماکہ، دس افراد ہلاک

بلوچستان
بلوچستان
پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے ضلع جھل مگسی میں ایک درگاہ پر ہونے والے خودکش دھماکے میں متعدد افراد ہلاک اور زخمی ہو گئے‘ ہیں۔
بلوچستان کے وزیرِ داخلہ سرفراز بگٹی نے بی بی سی کو بتایا ہے‘ کہ یہ دھماکہ فتح پور شریف کی درگاہ کے بیرونی دروازے پر ہوا ہے۔
٭ پاکستان میں مزاروں پر حملوں کی تاریخ ان کا کہنا تھا کہ درگاہ پر تعینات پولیس اہلکار نے جب حملہ آور کو روکا تو اس نے خود کو دھماکے سے اڑا لیا۔ سرفراز بگٹی کے مطابق اب تک کی اطلاعات کے مطابق اس حملے میں کم از کم دس زائرین ہلاک ہوئے ہیں‘ جبکہ 20 کے قریب افراد زخمی ہوئے ہیں۔
انھوں نے مزید بتایا کہ زخمی ہونے والے افراد میں سے سات شدید زخمیوں کو لاڑکانہ منتقل کرنے کے لیے انتظامات کیے جا رہے‘ ہیں۔
صوبائی وزیرِ داخلہ کے مطابق درگاہ میں آج شیعہ مسلمانوں کی جانب سے ایک مجلس منعقد کی جانی تھی جس سے قبل ہی وہاں یہ دھماکہ ہوا ہے۔
سرفراز بگٹی نے بتایا کہ عام طور پر اس درگاہ کی سکیورٹی کے لیے تقریباً سات پولیس اہلکار تعینات ہوتے ہیں‘ لیکن آج یہاں 25 کے قریب سکیورٹی اہلکار تعینات کیے گیے تھے۔
خیال رہے‘ کہ یہ وہی درگاہ ہے‘ جہاں سنہ 2005 میں بھی ایک دھماکہ ہوا تھا جس میں 30 کے قریب افراد مارے گئے‘ تھے۔
روزانہ خبریں اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔