غیر ملکی کوہ پیماؤں پر ماؤنٹ ایورسٹ اکیلے سر کرنے پر پابندی

ماؤنٹ ایورسٹ
ماؤنٹ ایورسٹ
نیپال نے کوہ پیمائی میں حادثات کو کم کرنے کے لیے ماؤنٹ ایورسٹ سمیت دیگر چوٹیوں پر کوہ پیماؤں کے اکیلے جانے پر پابندی عائد کر دی ہے۔
نیپال کی جانب سے نئے قواعد کے تحت معذور اور نابینا کوہ پیماؤں کو بھی پہاڑ سر کرنے کی اجازت نہیں‘ ہو گی جب تک کہ ان کے پاس میڈیکل سرٹیفیکیٹ نہیں‘ ہو گا۔ محکمہ سیاحت کے ایک اہلکار نے کہا کہ قواعد میں تبدیلی کوہ پیمائی کو محفوظ بنانے اور اموات میں کمی کے لیے کی گئی ہے۔
رواں سال سب سے زیادہ کوہ پیماؤں نے ماؤنٹ ایورسٹ کو سر کرنے کی کوشش کی ہے۔
تاہم اس بری تعداد کے باعث حادثات میں بھی اتنا ہی زیادہ اضافہ ہوا ہے۔
مزید پڑھیے ’جہاں آکسیجن سلینڈر ہی زندگی کی ضمانت ہوں‘ ’اتنی بلندی پر سو کر کبھی کوئی اُٹھا نہیں‘‘ دنیا کے پانچ ’ممنوعہ‘ پہاڑ نیپال کے سرکاری اعداد و شمار کے مطابق اس سال کوہ پیمائی میں ہونے والی اموات کی تعداد چھ ہے۔
اس میں 85 سالہ بہادر شیرچن بھی شامل ہیں‘ جنھوں نے ماؤنٹ ایورسٹ کو سر کرنے والے ضعیف ترین شخص کا اعزاز دوبارہ اپنے نام کرنے کی کی کوشش کی تھی۔ ماؤنٹ ایورسٹ کے قریب ہی واقع ایک پہاڑ کو سر کرنے کی کوشش میں سوئس کوہ پیما جن کو سوئس مشین کا نام دیا گیا تھا اپنی جان سے ہاتھ دھو بیٹھے وہ یہ پہاڑ اکیلے سر کرنے کی کوشش میں تھے۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here