کوئٹہ میں ہزارہ کمیونٹی کی ٹارگٹ کلنگ؛چیف جسٹس پاکستان نے ازخود نوٹس لے لیا

ٹارگٹ کلنگ

کیس کی سماعت 10 مئی کے بعد ہوگی، چیف جسٹس

اسلام آباد: چیف جسٹس پاکستان جسٹس ثاقب نثار نے کوئٹہ میں ہزارہ کمیونٹی کی ٹارگٹ کلنگ کا پراز خود نوٹس لے لیا۔ چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس ثاقب نثارنے ہزارہ کمیونٹی کے قتل کے معاملے پرازخود نوٹس لیتے ہوئے کہا کہ میں کوئٹہ میں ہزارہ برادری سے مل کرآیا تھا، وہاں ان کا قتل ہورہا ، یہ لوگوں کی زندگی کا معاملہ ، ہزارہ کمیونٹی کے لوگوں کے بچے تعلیمی اداروں میں ن جا سکتے۔

چیف جسٹس نے بلوچستان حکومت، لیویز، پولیس اوروزارت داخلہ سے رپورٹ طلب کرتے ہوئے استفسار کیا کہ لاء اینڈ آرڈر کو برقرار رکھنا کس کا کاماورکیا ہزارہ کمیونٹی پاکستانی ن ، حکومت ہزارہ کمیونٹی کے لیے کیا کر رہی ، کیا سیکورٹی فراہم کرنا حکومت کا کام نجب کہ ہزارہ برادری کے قتل میں ملوث افراد کھلے عام جلسے کرر ۔ کیس کی سماعت 10 مئی کے بعد ہوگی۔

واضح ر کہ کوئٹہ میں ٹارگٹ کلنگ کے خلاف دھرنے میں بیٹھے ہزارہ برادری کے مظاہرین نے دھرنا ختم کرنے سے انکار کرتے ہوئے مطالبہ کیا تھا کہ آرمی چیف ان سے ملاقات کریں اور ہمارے مطالبات سنیں۔ آرمی چیف کی ملاقات کے بعد گزشتہ روز ہزارہ برادری کا دھرنا ختم کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔