فیس بک نے جنسی استحصال سے متعلق سرچ سجیشن پر معافی مانگ لی

جیسے ہی ہمیں اس بات کا علم ہوا ہم نے اس جارحانہ آٹو کمپلیٹ ورڈز کو سرچ بار سے ہٹا دیا، ترجمان فیس بک، اس خبرکوبھی پڑھیں: شمالی کوریا تیل کی فراہمی کے حوالے سے شکست میں دوسرا جہاز لے لیا سان فرانسسکو: فیس بک نے سرچ بار کے آٹو کمپلیٹ آپشن میں بچیوں کے جنسی استحصال کے الفاظ سامنے آنے پر معافی مانگ لی۔ اس خبرکوبھی پڑھیں: سوشل میڈیا کا ڈیٹا انسانی مزاج معلوم کرنے میں مددگار سی این این کے مطابق فیس بک صارفین نے شکایت کی کہ سرچ بار میں video of لفظ ٹائپ کرتے ہی آٹو کمپلیٹ ورڈز میں بچیوں کے جنسی استحصال اور کم عمر بچیوں سے زیادتی کی ویڈیوز کے آپشن سامنے آرجو انتہائی بیہودہ اور لغو بات ۔ اس خبرکوبھی پڑھیں: کم ڈیٹا استعمال کرنے والا، ہلکا پھلکا ’ٹویٹر لائٹ‘ صارفین نے اس شکایات کے ساتھ ساتھ سرچ بار کے اسکرین شاٹس لے کر فیس بک اور ٹوئٹر پر بھی شیئر کیے جس پر لوگوں نے کمںٹ کرکے فیس بک انتظامیہ کو تنقید کا نشانہ بنایا اور ایسے الفاظ کو سرچ بار کا حصہ نہ بنانے کا کہا۔ جواب میں فیس بک انتظامیہ نے ان شکایات کا نوٹس لیتے ہوئے صارفین سے معذرت کرلی۔ اس خبرکوبھی پڑھیں: اوبر کے ساڑھے 5 کروڑ صارفین کا ڈیٹا ہیک ہونے کا انکشاف سی این این سے بات کرتے ہوئے فیس بک کے ترجمان نے کہا کہ ہم اس عمل پر معذرت خواہاور جیسے ہی ہمیں اس بات کا علم ہوا ہم نے فوری طور پر ایسے جارحانہ آٹو کمپلیٹ ورڈز کو سرچ بار سے ہٹا دیا۔ اس خبرکوبھی پڑھیں: سائنسدانوں نے 2018 میں ہولناک زلزلوں کی پیش گوئی کردی ترجمان نے مزید کہا کہ اب اس بات کی تحقیقات کی جارہیکہ جنسی استحصال سے متعلق سرچ سجیشن کس طرح سرچ بار کا حصہ بن ، ہم  سرچ سجیشن کی بہتری کےلیے کام کرراور اس بات کی ہرگز اجازت ن دیں گے کہ جنسی مواد کی اس طرح سے واضح عکاسی کی جائے کیوں کہ اس طرح کے مواد کو فیس بک سے دور رکھنے کے پابند ۔ اس خبرکوبھی پڑھیں: لندن کی بسیں اب ڈیزل کے بجائے کافی سے چلیں گی

متعلقہ خبر یں

روزانہ خبریں اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔

Leave a Reply