فیس بک کے بانی کا پرائیویٹ چیٹ اسکین کرنے کا اعتراف

فیس بک
فیس بک

میسنجر میں آنے والے ہر قسم کے پیغامات، وائس میسجز، ویڈیوز، فوٹوز سب کو ازخود نظام کے تحت اسکین کیا جاتا

کیلیفورنیا: فیس بک کے بانی مارک زکربرگ نے اعتراف کیاکہ میسنجر میں ہونے والی پرائیویٹ چیٹ کو فیس بک اسکین کرلیتا ۔

فاکس نیوز کو انٹرویو دیتے ہوئے مارک زکربرگ نے بتایا کہ میسنجر میں آنے والا ہر قسم کا مواد (پیغامات، وائس میسج، ویڈیوز، فوٹوز سب کو) ازخود نظام کے تحت اسکین کیا جاتا ۔ یہ نظام میسنجر میں بھیجے جانے والے ہر میسج کو فوری طور پر اسکین کرتاتاکہ اس بات کا پتا لگایا جاسکے کہ شیئر ہونے والا پیغام فیس بک کمیونٹی کی پالیسیوں اور اصولوں کے برخلاف تو ن؟ اگر فیس بک کی مروجہ پالیسیوں کے خلاف کوئی بھی مواد اسکین ہوتاتو اسے فوری طور پر بلاک کردیا جاتا ۔

ایک رپورٹ کے مطابق زکربرگ نے واضح کیا کہ میسنجر پر اسکین کیا گیا مواد اشتہارات کےلیے قطعی استعمال ن ہوتا، کمپنی توہین آمیزیا اشتعال انگیزی پر مبنی مواد کو اسی طریقہ کار کے تحت روک دیتیجس طرح فیس بک ایسے مواد کو بلاک کرنے کےلیے ٹولز کا استعمال کرتی ۔

یہ بھی پڑھیں:

رائیونڈ محل کی کہانی ——-!

کمپنی  کے ترجمان نے مثال دی کہ اگر دو افراد آپس میں میسنجر پر پیغامات بھیج رتو اسی وقت ازخود نظام فعال ہوجاتاجو خود کار طریقے سے بھیجی گئی تصویر کو اسکین کرکے  ایک تکنیک سے پتا لگاتاکہ اسکین شدہ تصویر کسی بچے کے استحصال کےلیے استعمال تو ن ہورہی؟ یا یہ کہ بھیجا گیا لنک ک وائرس تو ن؟

ترجمان کے مطابق جیسے ہی میسنجر سمجھتاکہ بھیجا گیا مواد اس طرح کاجس سے کسی نقصان کا اندیشہتو خودکار نظام اسے ازخود فوراً بلاک کردیتا ۔