صارفین کا ڈیٹا چوری ہونے پر فیس بک کا معاوضہ دینے کا اعلان

فیس بک
فیس بک

فیس بک صارفین کو کم سے کم 500 ڈالر اور زیادہ سے زیادہ 40 ہزار ڈالر تک ادا کرسکتی ۔

نیویارک سٹی: فیس بک نے اعلان کیاکہ اگر کسی صارف کا ڈیٹا چوری کرکے اسے کسی تھرڈ پارٹی نے استعمال کیاتو فیس بک اس صارف کو معاوضہ فراہم کرے گا۔ اس خبر کو بھی پڑھیں : فیس بک نے کروڑوں جعلی اکاؤنٹس کا اعتراف کرلیا

فیس بک کے بانی نے کانگریس کے سامنے پیش ہوکر اپنے صارفین کے ڈیٹا چوری پر تاسف کے اظہار کے بعد اب اعلان کیاکہ وہ متاثرہ لوگوں کو معاوضہ فراہم کرے گا تاہم فیس بک نے ہرجانے کی رقم کی تفصیلات جاری ن کی البتہ اتنا ضرور کہاکہ یہ ڈیٹا چوری ہونے کے بعد ہونے والے اثرات کی بنا پر دیا جائے گا۔ اس خبر کو بھی پڑھیں : واٹس ایپ نے فیس بک اکاؤنٹس ڈیلیٹ کرنے کا کہہ دیا

فیس بک کے سیکیورٹی سربراہ کولِن گرین نے بھی اپنے بلاگ میں اس پروگرام کی تفصیلات بیان کیتاہم بعض تجزیہ کاروں نے کہاکہ فیس بک کی جانب سے یہ رقم کم سے کم 500 ڈالر اور زیادہ سے زیادہ 40 ہزار ڈالر تک ہوسکتیجس کا دارومدار ڈیٹا چوری ہونے کی مقدار، اس کے استعمال، اس کے اظہار اور متاثرین کے تعداد کے لحاظ سے کیا جائے گا۔ اس خبر کو بھی پڑھیں : ڈیٹا چوری اسکینڈل؛ فیس بک پرائیوسی سیٹنگز میں بڑی تبدیلیاں

فیس بک نے اسے ڈیٹا ابیوز باؤنٹی کا نام دیاجو ایسے صارفین کو دیا جائے گا جن کا ڈیٹا کسی ایپ ڈیولپر نے استعمال کیا یا پھر کسی دوسری پارٹی نے استعمال، چوری یا اسے کسی سیاسی اور دیگر مقصد کے لیے استعمال کیا گیا ہو۔ اس خبر کو بھی پڑھیں : ’فیس قابلِ اعتبار خبروں کی حوصلہ افزائی کرے گا: مارک زکربرگ

واضح ر کہ کیمبرج اینیلٹکا کمپنی کی جانب سے حال ہی میں انکشاف کیا گیا تھا کہ فیس بک کے 8 کروڑ 70 لاکھ صارفین کا ڈیٹا ان کی مرضی کے بغیر 2016 میں صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے انتخابات پر اثر ڈالنے کے لیے استعمال کیا گیا تھا۔ تاہم فیس بک نے اس عمل سے انکار کیا لیکن اس واقعے نے فیس بک کی ساکھ کو شدید نقصان پہنچایا .