کم ڈیٹا استعمال کرنے والا، ہلکا پھلکا ’ٹویٹر لائٹ‘

کیلیفورنیا: ٹویٹر نے حال ہی میں اپنا لائٹ ورژن متعارف کرایاجو قدرے ہلکا پھلکااور اصل ورژنز کے مقابلے میں نصف ڈیٹا استعمال کرتا ۔ اس کا مقصد ایسے علاقوں میں ٹویٹر کا استعمال بڑھاناجہاں ایک جانب تو موبائل انٹرنیٹ مہنگایا پھر وہاں موبائل انٹرنیٹ کی سہولیات بہت ناقص ۔ ٹویٹر کے اس ہلکے ورژن کو ٹویٹر لائٹ کا نام دیا گیاجس کا حجم صرف 3 میگابائٹساور یہ عام ٹویٹر کے مقابلے میں نصف ڈیٹا استعمال کرتا ۔ اس کے ذریعے ویڈیوز، پوسٹس اور ٹویٹس ازخود ڈاؤن لوڈ ن ہوتیں بلکہ اس کا فیصلہ یوزر کرتاجس سے ڈیٹا کی بچت ہوتی ۔ دو ماہ تک فلپائن میں اس کی کامیاب آزمائش کی گئی اور ماہرین کے مطابق اس سے ٹویٹر استعمال کرنے والوں کی تعداد میں ڈرامائی اضافہ ہوا ۔ ٹویٹر لائٹ ویب براؤزر کی طرح کام کرتالیکن یہ یکساں طور پر ٹویٹر ایپ کی طرح دکھائی دیتاتاہم یہ صرف ایک تصویر کے برابر جگہ گھیرتا ۔ فلپائن میں متعارف کرانے کے بعد وہاں ٹویٹر استعمال کرنے والوں کی تعداد میں 50 فیصد اضافہ بھی دیکھا گیا جو حیرت انگیز امر ۔ ٹویٹر کمپنی کے مطابق اگر ک ٹو جی اور تھری جی سروس بھی چل رہی ہو تو وہاں بھی یہ ایپ بہت اچھی طرح کام کرتیاور یہ فیصلہ دیگر سوشل میڈیا ویب سائٹ کی کامیابی کے بعد کیا گیا ۔ اس سے قبل 2015 میں فیس بک لائٹ متعارف کرایا گیا تھا اور بھارت کے لیے کم ڈیٹا خرچ کرنے والی یوٹیوب ایپ بھی تیار کی گئی تھی۔ سال 2016 کے اختتام تک دنیا بھر میں ٹویٹر استعمال کرنے والوں کی تعداد 30 کروڑ سے تجاوز کرچکی تھی جو 2015 کے مقابلے میں تو چار گنا زیادہلیکن اس کا فیس بک سے کوئی مقابلہ ن کیونکہ اسے اب ایک ارب نوے کروڑ افراد استعمال کرتے ۔ ٹویٹر پراڈکٹس کے نائب صدر کائتھ کولمین کے مطابق نئے ٹویٹر لائٹ سے لوگ تیزرفتار، کم خرچ اور بہتر انداز میں ٹویٹر استعمال کرسکیں گے۔ اس کے لیے ایپ میں بہت سی تبدیلیاں کی گئیجن میں براؤزر کا سا انداز اور پوسٹس کے ازخود ڈاؤن لوڈ نہ ہونے کا آپشن قابلِ ذکر ۔ اگر ڈیٹا سیونگ کا فیچر آن کردیا جائے تو ٹویٹر کا استعمال ہونے والا ڈیٹا 70 فیصد تک کم ہوجاتا ۔ جن 24 ممالک میں یہ سہولت فراہم کی جارہیان میں پہلے فلپائن میں آزمائش کی گئیجبکہ الجیریا، بنگلا دیش، بولیویا، برازیل، چلی، کولمبیا، کوسٹا ریکا، ایکواڈور، مصر، اسرائیل ، قازقستان، میکسیکو، ملائیشیا، نائیجیریا، نیپال، پناما، پیرو، سربیا، ایل سلواڈور اور دیگر ممالک میں ٹیوٹر لائٹ متعارف کرایا گیا ۔

متعلقہ خبر یں

روزانہ خبریں اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔

Leave a Reply