جیل میں غربت بھرے دنوں کو یاد کرکے آنسو آجاتے ہیں،سنجے دت

ممبئی: بالی ووڈ میں سنجو بابا کے نام سے مشہور اداکار سنجے دت کا شمار بھارت کے مہنگے ترین اداکاروں میں ہوتالیکن ایک وقت ایسا بھی تھا جب ان کے پاس کسی کو بھی دینے کیلئے کچھ ن تھا۔

سنجے دت کی زندگی مختلف تنازعات سے بھری پڑی ، کیرئیر کی ابتدا میں سنجے دت منشیات کے استعمال کے باعث خبروں کی زد میں ر۔ بعد ازاں ممبئی دھماکہ کیس میں ان طویل مدت تک جیل کی ہوا کھانی پڑی جس سے ان کا کیرئیر متاثر ہوا اور ان سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔ ایک انٹرویو کے دوران سنجے دت نے جیل میں گزارے دنوں کے متعلق بات کرتے ہوئے کہا تھا کہ انہوں نے جیل میں بہت مشکل وقت دیکھاجسے یاد کرکے آج بھی ان کی آنکھوں میں آنسو آجاتے ، جب کہ جیل میں گزارےدنوں میں انہوں نے بے تحاشہ غربت بھی دیکھی ۔

بھارت میں ان دنوں ہندوؤں کا مذہبی تہوار رکھشا بندھن منایا جارہا ، سنجے دت کی بہنوں پریا اور نمرتا دت نے اپنے بھائی کے مشکل دنوں کے بارے میں بھارتی میڈیا سے بات کرتے ہوئےکہا کہ ایک وقت ایسا بھی تھا جب ہم رکھشا بندھن کے دن اپنے بھائی سے ملنے جیل جاتےاور ان کے پاس ہمیں دینے کیلئے کچھ ن ہوتا تھا۔ ایک بار سنجے دت نے ہمیں 2 روپے کے کوپن دیئے جو ان جیل میں ان کے خرچے کیلئے ملےلیکن انہوں نے یہ ہمیں دے دئیے اور روپڑے، ہماری بھی آنکھیں بھر آئیں ہم نے آج تک اپنے بھائی کی جانب سے دئیے جانے والے یہ کوپن سنبھال کر رکھے ہوئے ۔

واضح ر کہ سنجے دت اپنی سزا پوری کرکے جیل سے رہا ہوچکےاور اپنی نئی فلم ’’بھومی‘‘ کی شوٹنگ میں مصروفجس میں آدیتی راؤ حیدری ان کی بیٹی کا کردار ادا کررہی،فلم 22 ستمبر کو ریلیز کی جائے گی۔