304 رنز کے ہدف کے تعاقب میں ویسٹ انڈیز کی پہلی وکٹ گر گئی

west indies

ڈومینیکا کے ونڈسر سٹیڈیم میں کھیلے جانے والے تیسرے اور آخری
کرکٹ ٹیسٹ میچ کے چوتھے دن کھیل کے اختتام پر ویسٹ انڈیز نے
پاکستان کے خلاف ایک وکٹ کے نقصان پر سات رنز بنا لیے۔

ویسٹ انڈیز کو پہلا نقصان اس وقت اٹھانا پڑا جب کیرون پاول چار
رنز بنا کر یاسر شاہ کی گیند پر شان مسعود کے شاندار کیچ پر آؤٹ
ہوئے۔

تفصیلی سکور کارڈ

’مصباح
نے پاکستان کا کیا بگاڑا تھا‘

سارا دن
ویسٹ انڈیز کی سست رفتار بیٹنگ

ویسٹ انڈیز کو یہ میچ جیتنے کے لیے مزید 297 رنز کی ضرورت ہے اور
دوسری اننگز میں اس کی نو وکٹیں باقی ہیں۔

مہمان ٹیم کی جانب سے کیرن پاول اور کریگ بریتھویٹ نے دوسری اننگز
کا آغاز کیا۔

اس سے پہلے پاکستان نے ویسٹ انڈیز کو جیتنے کے لیے 304 رنز کا ہدف
دیا۔

میچ کے چوتھے دن پاکستان نے ویسٹ انڈیز کے خلاف 174 رنز آٹھ
کھلاڑی آؤٹ پر دوسری اننگز ڈکلیئر کر دی۔

مہمان ٹیم کی جانب سے یاسر شاہ نے اور محمد عامر نے آٹھویں وکٹ کے
لیے 61 رنز کی اہم شراکت قائم کی۔

پاکستان کی جانب سے اپنا آخری ٹیسٹ میچ کھیلنے والے مصباح الحق
اور یونس خان اپنے کریئر کی آخری اننگز میں بالترتیب دو اور 35
رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔
تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images Image caption پاکستان کی جانب سے اپنا آخری ٹیسٹ میچ
کھیلنے والے مصباح الحق اور یونس خان اپنے کریئر کی آخری اننگز میں
بالترتیب دو اور 35 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے

اس سے پہلے ویسٹ انڈیز کی ٹیم اپنی پہلی اننگز میں 247 رنز بنا کر
آؤٹ ہو گئی جس کے نتیجے میں پاکستان کو 129 رنز کی برتری حاصل
ہوئی۔

پاکستان کی جانب سے اظہر علی اور شان مسعود نے دوسری اننگز کا
آغاز کیا لیکن اسے ابتدا میں ہی دہرا نقصان اٹھانا پڑا۔

پہلی اننگز میں سینچری بنانے والے اظہر علی صرف تین رنز بنا کر
فاسٹ بولر گیبریئیل کے ہاتھوں آؤٹ ہو گئے اور نوجوان بیٹسمین بابر
اعظم بغیر کوئی سکور کیے چیز کو اپنی وکٹ تمھا گئے۔
تصویر کے کاپی رائٹ AFP Image caption بابر اعظم کھانے کے وقفے سے قبل صفر پر آؤٹ
ہو گئے

آج دن کے آغاز میں شین ڈاؤرچ نے 20 رنز پر جب کہ کپتان جیسن ہولڈر
نے 11 رنز پر اپنی بیٹنگ دوبارہ شروع کی لیکن دن کے پہلے ہی اوور
میں محمد عامر نے شین ڈاؤرچ کو بولڈ کر دیا۔

ویسٹ انڈیز کا سکور جب 239 پر پہنچا تو محمد عباس نے دو لگاتار
گیندوں پر راسٹن چیز اور دیواندرا بشو کو آؤٹ کر کے ویسٹ انڈیز کو
مشکل میں ڈال دیا۔

دو اوورز کے بعد انھوں نے الزاری جوزف کو بھی بولڈ کر کے ویسٹ
انڈیز کی نویں وکٹ حاصل کر لی۔

میزبان ٹیم کی آخری وکٹ 247 رنز کے سکور پر گری جب محمد عباس نے
شینن گیبرئیل کو صفر پر آؤٹ کر کے اپنی پانچویں وکٹ حاصل کی۔ یہ
ان کے کیریر کی بہترین بولنگ تھی۔
تصویر کے کاپی رائٹ AFP Image caption محمد عباس نے کیریر کی بہترین بولنگ کی اور
پانچ وکٹیں حاصل کیں

بدھ کو شروع ہونے والے اس ٹیسٹ میچ میں ویسٹ انڈیز نے ٹاس جیت کر
پاکستان کو پہلے کھیلنے کی دعوت دی تھی۔

پاکستان کے لیے یہ میچ نہ صرف اس لیے اہم ہے کہ اس میں فتح کی
صورت میں وہ پہلی بار ویسٹ انڈیز کو اس کی سرزمین پر ٹیسٹ سیریز
میں شکست دینے میں کامیاب ہو گا۔

یہ پاکستان کے کپتان مصباح الحق اور بیٹسمین یونس خان کے کریئر کا
آخری میچ ہے۔

Leave a Reply