چھوٹی کھلونا کشتی نے ہزاروں کلومیٹر کا سفر طے کرلیا

ایڈونچر کشتی
ایڈونچر کشتی

ایڈونچر کشتی کئی ہزار کلومیٹر کا سفر طے کرچکیاور اس وقت جنوبی امریکا میں موجود

اسکاٹ لینڈ: دو بچوں کی تیار کردہ ایک کشتی مسلسل ایک سال سے کھلے سمندروں میں تیر رہیاور ہزاروں کلومیٹر کا فاصلہ طے کرنے کے باوجود اب تک ن ڈوبی۔

بچے عموماً چھوٹی کشتیاں تالاب یا سوئمنگ پول میں ہی چلاتے لیکن اسکاٹ لینڈ کے دو بھائیوں نے بحری قزاقوں والی ایک خوبصورت کشتی بنائی تھی جس کی تیاری میں ان کے والدین بھی شریک ہوئے۔

ہیری اور اولی فرگوسن کی اس کشتی  میں وزن کو متوازن کیا گیا تاکہ وہ تیز لہروں میں بھی تیرتی ر۔ علاوہ ازیں کشتی کے عرشے کے اندر ہر جگہ پولی اسٹائرین فوم لگایاتاکہ کشتی کو اچھال کی قوت ملتی ر۔ ان سب تبدیلیوں کے باوجود کسی کو یقین نہ تھا کہ یہ کشتی اس طرح مسلسل گہرے سمندروں میں تیرتی ر گی۔

کشتی کو اسکاٹ لینڈ کے ساحلی مقام پیٹر ہیڈ سے پانی کے حوالے کیا گیا تھا جس کے بعد وہ گزشتہ برس مئی میں بین الاقوامی پانیوں میں داخل ہوگئی تھی اور اسے بہت سے جہازوں نے دیکھا بھی تھا۔ 8 نومبر 2017ء کو یہ کشتی اسکاٹ لینڈ سے موریطانیہ پہنچ چکی تھی جبکہ اب جنوبی امریکا کے گیانا سمندر سے گزر رہی ۔ اس خبر کو بھی پڑھیں : بچوں کے ساتھ ساتھ بڑھنے والے کپڑے تیار

اس کشتی کو ’ایڈونچر‘ کا نام دیا گیاجو پہلے اسکاٹ لینڈ سے ڈنمارک پہنچی اور اس کے بعد سویڈن اور ناروے تک چلی گئی۔ وہاں موجود کسی شخص نے دوبارہ اسے پانی کے حوالے کردیا کیونکہ کشتی میں ایک پیغام لکھاکہ اسے جو دیکھے وہ اسے دوبارہ سمندر میں چھوڑدے۔

اس کے بعد یہ ناروے سے دوبارہ آگے بڑھی اور اس میں نصب جی پی ایس ٹریکر برابر اس کی اطلاع دیتا رہا جس میں ایک جدید ترین واٹر پروف ٹرانسمیٹر بھی نصب ۔ اس خبر کو بھی پڑھیں : روشنی سے چلنے والا انتہائی مختصر کیمرا ایجاد

کشتی کے لیے فیس بک پیج بھی بنایا گیاجس میں اس کے سفرکی روداد اور تصاویر بھی دیکھی جاسکتی ۔ کچھ روز قبل تک اس نے کوئی اطلاع ن دی تھی لیکن اچانک اس کے ٹرانسمیٹر نے دوبارہ کام شروع کردیا اور اب وہ جنوبی امریکی سمندروں میں کسی مقام پر موجود ۔ اس خبر کو بھی پڑھیں : چینی والد نے 24 برس بعد بچھڑی ہوئی بیٹی کو ڈھونڈ نکالا