منشیات کا اسمگلر کبوتر پولیس مقابلے میں ہلاک

بیونس آئرس: ارجنٹینا پولیس نے جیل میں قیدیوں کو منشیات پہنچانے والے کبوتر کو گولی مار کر ہلاک کر دیا۔ کبوتر کی پشت پر ایک چھوٹا پیکٹ بندھا تھا جس میں بھنگ سے کشید کردہ منشیات کی تھوڑی مقدار موجود تھی، یہ پیکٹ اس کے پروں میں دھاگوں سے باندھا گیا تھا۔ لاپامپا کے علاقے سانتا روسا میں واقع کلونیئل جیل کے افسران نے بتایا کہ پہلے انہوں نے ایک کبوتر کو کئی روز تک جیل کی عمارت میں آتے اور جاتے دیکھا تو اس پر شک گزرا۔ جیسے ہی کبوتر نیچے گرا تو پولیس افسران نے اس کی کمر سے ساڑھے سات گرام بھنگ، نشہ آور ریوٹرل کی 44 گولیاں اور ایک یو ایس بی اسٹک برآمد کی۔ جیل میں تعینات فارنزک ماہرین نے پیکٹ میں منشیات کی تصدیق بھی کی جن باریک کپڑے میں لپیٹا گیا تھا۔ اس کے بعد جیل کے اندر مزید تین افراد کو ملوث پایا گیا جن کے خلاف تفتیش ہو رہی ۔ پولیس کے مطابق اس نے 15 سے زائد کبوتر پکڑےجو جیل کے اندر سے باہر ایک دن میں 15 کے قریب پروازیں کر ر ۔ اس سے ظاہر ہوتاکہ منشیات کی فراہمی کے لیے کبوتروں کو منظم انداز میں استعمال کیا جا رہا تھا۔ اس کے علاوہ ارجنٹینا کے مشہور شہر بیونس آئرس میں کبوتروں کی مدد سے جیل میں منشیات فراہم کی جاتی رہی تھی۔ کویت میں بھی ایک جیل میں کبوتر کو پکڑا گیا تھا جس نے 178 مرتبہ نشہ آور گولیاں جیل میں پہنچائی تھیں۔ اس کے علاوہ کوسٹا ریکا اور دیگر ممالک میں منشیات پہنچانے والے کبوتر پکڑے۔

متعلقہ خبر یں

روزانہ خبریں اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔