شریف خاندان کے نام ای سی ایل میں شامل کرانے کی سفارش مسترد

shareef khandan

اسلام آباد: نیب نے شریف خاندان کے اثاثے منجمد کرنے اور ای سی ایل پر نام ڈالنے کی سفارش مسترد کردی ۔

ایکسپریس نیوز کے مطابق احتساب بیورو (نیب) نے نوازشریف اور ان کے بچوں کے خلاف عزیزیہ مل اور ایون فیلڈ پراپرٹی کے ریفرنسز ہیڈ کوارٹر بجھوائےجس میں سفارش کی گئی تھی کہ سابق وزیراعظم نوازشریف اور ان کے بچوں حسن، حسین اور مریم نواز کے تمام اثاثے منجمد کئے جائیں۔

اس سے 15 روز قبل نیب لاہور نے شریف خاندان کے نام ای سی ایل پر ڈالنے کی بھی سفارش کی تھی۔  نیب لاہور نے وزیرخزانہ اسحاق ڈار کی بھی تمام منقولہ و غیرمنقولہ جائیدادیں ضبط کرنے اور ان کا نام ای سی ایل میں ڈالنے کی بھی سفارش کی تھی جب کہ نیب نے اسحاق ڈار کے خلاف آمدن سے زائد اثاثوں پر ریفرنس بناتے ہوئے وفاقی وزیرخزانہ کے خلاف کارروائی کی استدعا کی تھی۔

تاہم عید کے بعد ہونے والے اجلاس میں نیب نے نوازشریف، حسن، حسین اورمریم نواز کے نام ای سی ایل پر ڈالنے  اور اثاثے منجمد کرنے کی سفارش مسترد کردیجب کہ وزیرخزانہ اسحاق ڈار کا نام بھی ای سی ایل میں ڈالنے اور اثاثے منجمد کرکے کارروائی کی استدعا کو مسترد کردیا گیا ۔  نیب ہیڈ کوارٹرز نے ڈی جی نیب لاہور میجر ریٹائرڈ شہزاد سلیم کو خط بھیج دیا۔

دوسری جانب ترجمان نیب کی جانب سے جاری کردہ بیان میں کہا گیاکہ ڈی جی نیب لاہور نے شریف خاندان کی اثاثے منجمد کرنے اور نام ای سی ایل میں  ڈالنے کی کوئی تجویز ن  دی گئیاور نہ ہی کوئی تجویز رد ہوئیکیونکہ جب تجویز دی ہی ن  تو رد کیسے ہوگی۔ ترجمان کا کہنا تھا کہ میڈیا پر چلنے والی خبریں  بے بنیاد   ایسی خبروں سے اجتناب کیا جائے۔