دنیا تسلیم کرے یا نہ کرے ہم دہشت گردی کے خلاف جنگ جیت رہے ہیں، وزیر خارجہ

wazeer kharja

اسلام آباد: وزیرخارجہ خواجہ آصف کا کہناکہ ہماری بقا داؤ پر لگیاس لیے ہم سے بہتر یہ جنگ کوئی لڑ ہی ن سکتا تھا پاکستان دنیا کا واحد ملکجو دہشت گردی کے خلاف جنگ جیت رہا ۔

دفتر خارجہ اسلام آباد میں سفرا کانفرنس کے اختتام پر بریفنگ دیتے ہوئے وزیر خارجہ خواجہ آصف  کا کہنا تھا کہ خطے میں تبدیلی کے باعث نئی جغرافیائی تبدیلیاں آ رہی ، نئے اتحاد بن ر اور ہمیں بھی نئی اور درست سمت کا تعین کرنا ہو گا، ہمیں شدت سے احساسکہ ہماری قربانیوں کو دنیا دوسری نظر سے دیکھتیلیکن ہمیں دنیا کے نقطہٗ نظر کو تبدیل کرنا ہو گا۔

خواجہ آصف نے کہا کہ دنیا میں کوئی بھی ملک دہشت گردی کے خلاف جنگ ن جیت رہا لیکن ہماری بقا داؤ پر لگیاس لیے ہم سے بہتر یہ جنگ کوئی لڑ ہی ن سکتا تھا اب دنیا بے شک نہ مانے یا نہ مانے پاکستان واحد ملکجو دہشت گردی کے خلاف جنگ جیت رہا ، ایک دو واقعات ہوتے رہتے ، پاکستان کے20 کروڑ عوام اس بات کی گواہی دے رکہ کراچی سے سوات تک پورے پاکستان میں امن ، ہماری مسجدیں گھر گلیاں محفوظ ، میں یہ ن کہتا کہ حالات مکمل طور پر بہترلیکن بہت بہتر ۔

وزیرخارجہ کا کہنا تھا کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی پاک افغان پالیسی کے بعد خارجہ پالیسی کی تشکیل نہایت ضروری تھی اور ان کے بیان کے بعد سفرا کانفرنس کی اہمیت بڑھ گئی تھی سفرا کانفرنس میں امریکا کی نئی پالیسی پر غور کیا گیا، اور امریکا میں تعینات پاکستانی سفیر اعزاز چوہدری نے پالیسی کے مختلف زاویوں کو واضح کیا۔

خواجہ آصف نے کہا کہ ایک ماہ کے تجربے میں واضح ہوگیا کہ پاکستان کی خارجہ پالیسی میں بحران آئے لیکن افسران نے خارجہ پالیسی کے بحرانوں پر قابو پایا اور وزات خارجہ نے پاکستان کے اتار چڑھاؤ میں گران قدر خدمات پیش کی ۔ ان کا کہنا تھا کہ اسلام آباد میں منعقد کی گئی کانفرنس میں اقوام متحدہ کے کردار سے متعلق بات کی جب کہ دوست اور علاقائی ہمسایہ ممالک خصوصاً افغانستان کے ساتھ تعلقات پر بھی تفصیلی بات کی گئی  اور کشمیر میں جو ہو رہا اسےمدنظر رکھ  کر بھارت کے ساتھ تعلقات پر سیر حاصل گفتگو ہوئی۔