میشا شفیع کا ایک بار پھر علی ظفر پر جنسی ہراسانی کاالزام

میشا شفیع علی ظفر پر لگائےجنسی ہراسانی کے موقف پر اب بھی قائم کراچی: نامور گلوکارہ واداکارہ میشا شفیع نے علی ظفر پر ایک بار پھر جنسی ہراسانی کاالزام عائد کردیا۔ گلوکارہ میشا شفیع علی ظفر پر لگائےجنسی ہراسانی کے الزام پرروزاول کی طرح اب بھی قائماور انہوں نے ایک بار پھر اپنا موقف دہراتے ہوئے کہاکہ علی ظفر نے ان جنسی ہراسانی کا نشانہ بنایا۔ گزشتہ ماہ میشا شفیع کی جانب سے علی ظفرپرلگائےجنسی ہراسانی کے الزام کے بعد جہاں بہت سی آوازیں ان کے حق میں اٹھیں و بہت سے لوگوں کی جانب سے ان تنقید کا نشانہ بھی بنایاگیا۔ حال ہی میں ایک سوشل میڈیا صارف نے میشا شفیع کو علی ظفر پر الزامات لگانے کیلئے آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے ایک لمبی چوڑی ٹوئٹ کی اور لکھا’’میشا شفیع کے پورے کیریئر میں بس علی ظفرنے ان ہراساں کیا، باقی سب لڑکے تو باجی بہن سے دور دور سے سلام لیتے ، نا نجی پیغامات بھیجتے ، نظریں جھکاکر چلتے ، بس علی ظفر خراب تھا، باقی سب آپ کے ساتھ کام کرنے والے آدمی دودھ کے دھلے ، اگر آپ سچیتو باقی سب کانام بھی بتائیں جنہوں نے آپ کو ہراساں کیا۔‘‘ اس ٹوئٹ کا جواب میشا نے بھرپور انداز میں دیااورکہا’’جی ہاں صرف علی ظفر نے مجھے ہراساں کیا، لیکن انہوں نے میرے علاوہ کئی اور خواتین کو ہراساں کیا، میری جانب سے علی ظفر پر الزام لگائے جانے کے بعد تقریباً آدھے درجن خواتین سامنے آئیں اور ان تمام خواتین نے بھی علی ظفر پر یہی الزام عائد کیا، کیا یہ آپ کیلئے کافی ہوگا۔ اور کتنی خواتین سامنے آئیں مہربانی کرکے تعداد بتائیں۔‘‘ واضح ر کہ گزشتہ ماہ  میشا شفیع نے علی ظفر پر جنسی ہراسانی کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا تھا کہ علی ظفر نےان ایک سے زائد بار جنسی طور پر ہراساں کیا، میشا کے اس الزام کے بعد علی ظفر نے ان قانونی نوٹس بھیجا جس کے مطابق میشا ان پر لگائے الزامات واپس لیں ورنہ وہ ان پر 100 کروڑ ہرجانے کا دعویٰ دائر کردیں گے۔

متعلقہ خبر یں

روزانہ خبریں اور اس کی پالیسی کا کمنٹس سے متفق ہونا ضروری نہیں۔